چمن پہ میرے زوال کیوں ہے

7th September, 2014

شکستہ شاخیں میرے چمن کی
میرے وطن کے اداس پنچھی
سوال کرتے ہیں پوچھتے ہیں
قصور کیا ہے گناہ کیا ہے
کہ سانس لینا محال کیوں ہے
فضا میں ہر سو ملال کیوں ہے
کیوں زندگی کی قدر نہیں ہے
حوس کیوں جان سے قیمتی ہے
بنے ہیں کیوں موت کے بیوپاری
مذہب کے ٹھیکیدار ہیں جو
خدا کیوں خود کو سمجھ رہے ہیں
یہ صاحب اقتدار ہیں جو
کیوں بک رہے ہیں ضمیر ایسے
ہوا ہے مومن حقیر کیسے
خدا کے نائب کا حال دیکھو
گرا پڑا ہے فقیر جیسے
یہ پوچھتا ہے ہر ایک ذرا
میرے وطن کا یہ حال کیوں ہے
چمن کے مالی جواب دہ ہیں
چمن پہ میرے زوال کیوں ہے

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s