بے چین تھے کہ ہم کب , ذکر خدا کرتے تھے

22nd July, 2014

 

کان دھرا کرتے تھے

ہم بات سنا کرتے تھے

اک دور تھا کہ ہم بھی

مشہور ہوا کرتے تھے

 

کچھ محفلوں کی ہم بھی

جب جان ہوا کرتے تھے

کرتے نہیں تھے کچھ بھی

پر خوب کیا کرتے تھے

 

ان محفلوں میں اب کیوں

لگتا نہیں ہے دل یہ

لگتا ہے اب جہاں ہم

کبھی پل گنا کرتے تھے

 

ذکر خدا میں ہے جو

تسکین اور کہاں ہے

بے چین تھے کہ ہم کب

ذکر خدا کرتے تھے

 

پورب تھی سمت اپنی

پچھم کو تھا بلاوا

اٹھتے قدم تھے سیدھے

الٹا چلا کرتے تھے

 

ہر بات پہ دھیاں تھا

جو بات دنیوی تھی

الله کی بات ہوتی

تو چل دیا کرتے تھے

 

ابھ بھی بہت ہے باقی

شروع ہی سفر ہوا ہے

تیرا کرم کہ سن لی

جو ہم دعا کرتے تھے

Advertisements

One thought on “بے چین تھے کہ ہم کب , ذکر خدا کرتے تھے

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s